میگزین نے لکھا ہے کہ زر مبادلہ کے ذخائر دوگنے ہوکر سترہ اعشاریہ سات ارب ڈالر سے تجاوز کر گئے ہیں۔

پاکستان کی معیشت مستحکم ہوئی ہے:دی اکانومسٹ
03 مئی 2015 (09:49)
0

پاکستان کی معیشت سٹاک مارکیٹ میں بہتری، روپے کی قدر میں استحکام اور افراط زر کی شرح میں کمی کے ساتھ مستحکم ہوئی ہے۔

یہ بات لندن سے شائع ہونے والے میگزین دی اکانومسٹ کے ایک مضمون میں کہی گئی۔  میگزین نے لکھا ہے کہ زر مبادلہ کے ذخائر دوگنے ہوکر سترہ اعشاریہ سات ارب ڈالر سے تجاوز کر گئے ہیں۔


مختلف اشیاء کی قیمتوں میں اس سال مارچ تک دو اعشاریہ پانچ فی صد اضافہ ہوا ہے جو کہ ایک دہائی سے زائد عرصے میں کم ترین اضافہ ہے۔ موجودہ سال مرکزی بینک شرح سود کی حد میں پہلے ہی دو دفعہ کمی کرچکا ہے۔  ٹیکس کے دائرہ کار میں توسیع اور اخراجات میں کمی کی کوششوں کے نتیجے میں ٹیکسوں کی وصولی میں اضافہ ہواہے۔

فیڈرل بورڈ آف ریونیو نے ڈیڑھ لاکھ سے زائد ٹیکس نادہندگان کو نوٹس جاری کئے ہیں۔ اس کے علاوہ مزید ریٹیلرز کو ٹیکس کے دائرے میں لایا جارہا ہے۔ 2012 ء کے آّغاز سے اب تک پاکستان کی سٹاک مارکیٹ ڈالر کی مد میں دگنی ہوگئی ہے۔


اکانومسٹ کے مطابق بین الاقوامی مالیاتی فنڈ کے مطابق پاکستان کی معیشت کی شرح نمو چار اعشاریہ سات فیصد رہے گی جو گذشتہ آٹھ برسوں میں سب سے زیادہ شرح نمو ہے۔ عالمی بینک کی کاروباری سہولیات کی درجہ بندی میں بھی پاکستان کی پوزیشن بھارت سے بہتر ہے۔