نوازشریف نے کہاہے کہ پاکستان امن کا خواہا ں ہے تاہم اسے ہماری کمزور ی نہ سمجھاجائے ۔

خطے میں پائیدار امن کیلئے تمام دیرینہ تنازعات کاپر امن حل ناگزیر ہے:وزیراعظم
03 اگست 2016 (15:55)
0

وزیراعظم نوازشریف نے کہاہے کہ خطے میں پائیدار امن اور خوشحالی کے لئے تمام دیرینہ تنازعات کاپر امن حل ناگزیر ہے ۔وہ آج اسلام آباد میں اہم ملکوں اور کثیرالجہتی اداروں میں تعینات پاکستانی سفیروں کی تین روزہ کانفرنس کے اختتامی اجلاس سے خطاب کررہے تھے ۔
انہوں نے کہاکہ پاکستان امن کا خواہا ں ہے تاہم اسے ہماری کمزور ی نہ سمجھاجائے ۔انہوں نے کہاکہ پاکستان عدم پالیسی پریقین رکھتاہے اور دوسرے ملکوں کی خود مختاری کاا حترام کرتاہے۔
نوازشریف نے کہاکہ پاکستا ن غیر ملکی سرمایہ کاری کے لئے آج ایک بہتر ملک ہے ۔انہوں نے پاکستانی سفیروںکو ہدایت کی کہ وہ ملک میں مزید سرمایہ کاری لانے کے لئے بیرون ملک پاکستان کا مثبت تشخص اجاگر کریں۔
چین کے ساتھ تعلقات کے بارے میں وزیراعظم نے کہاکہ وقت گذرنے کے ساتھ یہ تعلقات مضبوط ہوئے ہیں ۔انہوں نے کہاکہ چین پاکستان اقتصادی راہدار ی تقدیر بدلنے کا منصوبہ ثابت ہوگااور خطے میں امن و خوشحالی آئے گی ۔
مسئلہ کشمیر کے بارے میں وزیراعظم نے کہاکہ اقوام متحدہ کی قراردادوں اور کشمیری عوام کی خواہشات کے مطابق دیرینہ تنازع کا حل پاکستان کی خارجہ پالیسی کا مرکزی نقطہ ہے ۔
انہوں نے سفیروں کو ہدایت کی کہ وہ دنیا کو اس بات سے آگاہ کریں کہ کشمیر بھارت کا اندرونی معاملہ نہیں ہے۔ افغانستان کے بارے میں انہوں نے کہاکہ پاکستان افغانستان میں امن کے قیام کے لئے کوششوں کی حمایت کرتارہے گا۔

اس سے پہلے مشیر خارجہ سرتاج عزیز نے اپنے خطاب میں کہاکہ پاکستان کے ماضی کے مقابلے میں آج دنیا کے ساتھ زیادہ روابط ہیں ۔سفیروں کی تین روزہ کانفرنس کی اختتامی نشست میں شرکاء کی سفارشات اور تجاویز کا لب لباب پیش کرتے ہوئے سرتاج عزیز نے کہاکہ تین سال کا جائزہ ذرائع ابلاغ کے ایک حصے کے اس نقطہ نظر کی تائید نہیں کرتاکہ پاکستان تنہاہورہاہے اور اس کی خارجہ پالیسی کی سمت غلط ہے۔
سرتاج عزیز نے کہاکہ آج ہم ماضی کی نسبت زیادہ مستحکم ہیں ۔ وزیراعظم کے ایک مضبوط خودمختار اور خوشحال پاکستان اور پرامن ہمسائیگی کے نصب العین پرپوری تندہی سے عملدرآمد کیاگیا ہے۔
انہوں نے کہاکہ خارجہ پالیسی میں حکومت کی نمایاں کامیابیوں کی عکاسی چین پاکستان اقتصادی راہداری اور چین کے ساتھ تذویراتی شراکت دار ی میں ہوتی ہے ۔انہوں نے کہاکہ پاکستان نے امریکہ ، یورپی یونین اور روس کے ساتھ مضبوط تعلقات کے قیام سمیت مسلمان ملکوں کے ساتھ اپنے تعلقات کو بھی فروغ دیاہے ۔