نوازشریف نے کہا کہ متاثرین کی بحالی اور انکی زندگی معمول پر لانا اولین ترجیح ہے۔

قوم آزمائش کی گھڑی میں زلزلہ زدگان کیساتھ ہے:وزیراعظم
02 نومبر 2015 (17:28)
0

وزیراعظم نواز شریف نے کہا ہے کہ حکومت آزمائش کی اس گھڑی میں زلزلہ زدگان کے شانہ بشانہ کھڑی ہے۔

پیر کے روز باجوڑ کی تحصیل خار میں زلزلہ زدگان سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ متاثرین کی بحالی اور ان کی زندگی معمول پر لانا ہماری اولین ترجیح ہے۔
وزیراعظم نے کہا کہ پہلے ہمارا اندازہ تھا کہ امدادی رقوم کی فراہمی کا عمل تین سے چار روز میں مکمل کر لیا جائے گا تاہم پہاڑی علاقوں میں مکانات کو ہونے والے نقصانات سامنے آنے کے بعد یہ عمل پندرہ دن تک مکمل ہونے کا امکان ہے۔
انہوں نے کہا کہ حکومت متاثرہ مکانات کی مرمت کا کام شدید سردی شروع ہونے سے قبل مکمل کرنا چاہتی ہے۔

 اس سے پہلے انہوں نے تیمرہ گرہ میں متاثرین زلزلہ سے خطاب کرتے ہوئے انہیں فوری طور پر معاوضے کی رقم کی ادائیگی یقینی بنانے کا عزم ظاہر کیاتاکہ ان کی مشکلات کم ہو سکیں۔

انہوں نے کہا کہ زلزلے سے متاثرہ افراد کو امدادی رقم کی فوری ادائیگی ہماری اولین کوشش ہے تاکہ متاثرین اپنے مکانات کی تعمیر نو کر سکیں۔
وزیراعظم نے کہا کہ امدادی پیکیج خیبر پختونخواء حکومت کی مشاورت سے تیار کیا گیا ہے اور اس کا مقصد متاثرہ خاندانوں کے مصایب کو کم کرنا ہے۔
انہوں نے کہا کہ متاثرین کو خیمے ، کمبل اور راشن بھی فراہم کیا گیا ہے جس کا مقصد سرد موسم خصوصاً پہاڑی چوٹیوں پر شدید سردی سے پیدا ہونے والی ان کی مشکلات کو کم کرنا ہے۔
نواز شریف نے مکمل طور پر تباہ ہونے والی اور جزوی طور پر مخدوش عمارتوں کا سروے بروقت مکمل کرنے پر خیبرپختونخواء حکومت اور پاک فوج کی تعریف کی۔ انہوں نے کہا کہ وہ نقصان زدہ مکانات کی تعمیر نو کے بعد دوبارہ ان علاقوں کا دورہ کریں گے۔
بعد میں وزیراعظم نے تیمرگرہ کے متاثرین زلزلہ میں امدادی چیک تقسیم کئے۔