01 مارچ 2017 (10:31)
0

نواز شریف نے کہا ہے کہ اسلام آباد اعلامیہ اقتصادی چیلنجوں سے اجتماعی طور پر نمٹنے کیلئے ای سی او کے رکن ملکوں کے عزم اور اتفاق رائے کا عکاس ہوگا۔وزیراعظم نواز شریف نے اقتصادی تعاون تنظیم کی صلاحیتوں کو بروئے کار لانے کیلئے تعاون تیز کرنے پر زور دیا ہے تاکہ خطے کو امن ترقی اور خوشحالی کا گہوارہ بنایا جائے۔وہ اسلام آباد میں چیئرمین شپ سنبھالنے کے بعد 13 ویں ای سی او سربراہ اجلاس سے خطاب کر رہے تھے۔
انہوں نے کہا کہ اسلام آباد اعلامیہ اقتصادی چیلنجوں سے اجتماعی طور پر نمٹنے کیلئے ای سی او کے رکن ملکوں کے عزم اور اتفاق رائے کا عکاس ہوگا۔وزیراعظم نے اسلام آباد اعلامیہ میں تجارت، ٹرانسپورٹ اور توانائی سمیت تعاون کے اہم شعبوں میں بھرپور توجہ دینے پر زور دیا۔
وزیراعظم نے کہا کہ رابطے کے ذریعے باہمی تعاون کے بارے میں پاکستان کے تصور کے مطابق چین پاکستان اقتصادی راہداری سے بہتر کوئی اور منصوبہ نہیں ہوسکتا۔
انہوں نے کہا کہ پاکستان جلد مشرق وسطیٰ، افریقہ اور یورپ کی منڈیوں تک آسان تیز اور سستی رسائی فراہم کرے گا۔وزیراعظم نے کہا کہ پاکستان اقتصادی تعاون تنظیم کو مضبوط معاشی بلاک اور ترقی کا انجن بنانے کی مشترکہ سوچ کئے حصول میں مدد فراہم کرسکتا ہے۔انہوں نے کہا کہ تمام رکن ملکوں کے مفادات کا حترام اور تحفظات کوحل کرتے ہوئے ای سی او تجارتی معاہدے کو فعال بنانے کی ضرورت ہے۔

اقتصادی رابطہ تنظیم کے تیرہویں سربراہ اجلا س کے بعد ای سی اوسیکرٹری جنرل کے ساتھ مشترکہ پریس کانفرنس میں وزیراعظم محمد نواز شریف کہا ہے کہ ای سی او اجلاس میں کثیر الجہت روابط کے فروغ اور علاقائی تجارت کیلئے اقدامات پر بات کی ہے۔
دریں اثناء وزیر اعظم نوازشریف نے مختلف شعبوں میں نمایا ں کارکردگی دکھانے والوں میں ای سی او ایورڈ بھی تقسیم کئے ۔
وزیراعظم نے اقتصادی تعاون تنظیم کے سربراہ اجلاس سے اپنے اختتامی خطاب میں کہاکہ ہمسایہ ممالک کے ساتھ پر امن تعلقات ہماری ترجیح ہیں ، ای سی اوکو کثیر الجہت روابط کے فروغ کیلئے اقدامات کی ہدایت کی ہے ۔انہوں نے کہاکہ ہمیں زمین ، فضا اور سمندری رابطوں کو فروغ دیناہے ۔

وزیر اعظم نوازشریف نے ای سی اوسربراہان اور دیگر وفود کے اعزاز میں ظہرانہ بھی دیا ۔