سینٹر مشاہد اﷲ نے صحافیوں سے گفتگوکرتے ہوئے کہاکہ صدر نے پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس سے اپنے خطاب میں تمام قومی اور بین الاقوامی مسائل کا احاطہ کیا ۔

File photo

رائے عامہ کے رہنمائوں نے صدر کے خطاب کو متوازن اور جامع قرار دیدیا
01 جون 2016 (19:19)
0

سماجی اور سیاسی شخصیات نے صدرممنون حسین کے پارلیمنٹ سے خطاب کو بہت زیادہ سراہا ہے ۔مشیر خارجہ سرتاج عزیز نے کہا ہے کہ صدر ممنون حسین کا پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس سے خطاب متوازن اور جامع تھا۔ پارلیمنٹ کی لابی میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ صدر نے رہنما اصول دیئے اور حکومت کی مثبت پالیسیوں کو سراہا۔

انہوں نے کہا کہ صدر نے بجلی کی پیداوارسے لے کر چین پاکستان راہداری منصوبے تک تمام اہم امور کا احاطہ کیا ۔ مشیر خارجہ نے مسلم ممالک میں تعلم تحقیق ، سائنس اور ٹیکنالوجی کی ترقی پر زور دیا ۔سینٹر مشاہد اﷲ نے اسلام آباد میں صحافیوں سے گفتگوکرتے ہوئے کہاکہ صدر نے پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس سے اپنے خطاب میں تمام قومی اور بین الاقوامی مسائل کا احاطہ کیا ۔

انہوں نے کہاکہ صدر نے اپنی تقریر میں دہشت گردی کے خلاف جنگ میں قربانیوں عارضی طورپر بے گھر ہونے والے افراد، بدعنوانی اور چین پاکستان اقتصادی راہداری منصوبے سمیت تمام معاملات پر روشنی ڈالی۔
سینیٹر مشاہد اﷲ نے مسئلہ کشمیر کے حل کی ضرورت پرزوردینے پر صدر کی تعریف کی ۔پاکستان مسلم لیگ نون خیبرپختونخوا کے جنرل سیکرٹری رحمت سلام خٹک نے کہاکہ صدر نے قوم کودرپیش مسائل کی نشاندہی کی انہوں نے کہاکہ صدر نے خصوصا قومی معیشت میں بہتری کے حوالے سے موجودہ حکومت کی کامیابیوں کواجاگرکیا ۔
خیبرپختونخوا میں مسلم لیگ نون کے ایک اوررہنما زبیر الہی نے کہاکہ صدر نے اپنے تقریب میں بین الاقوامی سطح پر ملک کا تشخص بہتر بنانے کے سلسلے میں وزیراعظم محمد نوازشریف کی طرف سے کیے گئے اقدامات کاذکرکیا ۔انہوں نے کہاکہ حکومت نے آپریشن ضرب عضب سیکورٹی فورسز کی کامیابیوں کو اجاگر کیا ۔
بلوچستان میں پاکستان مسلم لیگ نون کے رہنما غلام دستگیر خان نے مشترکہ اجلاس سے صدر کے خطاب کوسراہا انہوں نے کہا بلوچستان چین پاکستان اقتصادی راہداری منصوبے سے سب سے زیادہ فائدہ ہوگا ۔
انہوں نے دہشت گردی کے خلاف جنگ میں سیکورٹی فورسز کی طرف سے دی گئی قربانیوں کوسراہنے پر صدر کو خراج تحسین پیش کیا ۔